رحیم یار خان(اجمل کھوکھرسے)ڈپٹی کمشنر مہتاب وسیم اظہر کی زیر صدارت اعلیٰ سطحی اجلاس کمیٹی روم میں منعقد ہوا

رحیم یار خان(اجمل کھوکھرسے)ڈپٹی کمشنر مہتاب وسیم اظہر کی زیر صدارت اعلیٰ سطحی اجلاس کمیٹی روم میں منعقد ہوا جس میں ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر(ریونیو) بیرسٹر بلال سلیم، ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر(جنرل) ریاست علی، اسسٹنٹ کمشنرز عظمان چوہدری، سرمد علی بھاگت، ثاقب الماس، محمد سلیم سمیت محکمہ انہار، لائیو سٹاک، زراعت اور دیگر متعلقہ محکموں کے حکام نے شرکت کی۔اجلاس میں چولستان میں خشک سالی اور ضلع بھر کے تمام علاقوں کے کاشتکاروں کو کپاس کی کاشت کے لئے نہری پانی کی دستیابی کے معاملات کا جائزہ لیا گیا۔اس موقع پر اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے ڈپٹی کمشنر مہتاب وسیم اظہر نے کہا کہ ضلع رحیم یار خان کی حدود میں واقع صحرائے چولستان کی جو یونین کونسلز قحط سالی سے متاثر ہوئی ہیں وہاں امدادی سرگرمیاں جاری ہیں۔انھوں نے متعلقہ حکام کو ہدایت کی کہ چولستانیوں کو ریلیف فراہمی میں کسی قسم کی غفلت یا کوتاہی برداشت نہیں کی جائے گی۔انہوں نے کہا کہ چولستان کے جس مقام پر بھی ضرورت ہو وہاں امدادی ٹیمیں، میڈیکل و لائیو سٹاک کے ڈاکٹرز کو بھیجیں۔انہوں نے ہدایت کی کہ اس سلسلہ میں تمام اسسٹنٹ کمشنرز کے پاس مکمل ڈیٹا موجود ہونا چاہیے تاکہ ریلیف کے کاموں میں آسانی ہو اور بروقت متاثرین کی مدد کی جا سکے۔اجلاس میں رواں سیزن میں کپاس کی کاشت کے لئے نہری پانی کی دستیابی کے حوالے سے معاملات کا جائزہ لیتے ہوئے ڈپٹی کمشنر نے آبپاشی کے افسران کو ہدایت کی کہ پانی چوری کی روک تھام کے لئے بھرپور اقدامات کئے جائیں۔پانی چوروں کے خلاف فی الفور ایف آئی آر درج کروائی جائیں اور انہیں بھاری جرمانے کئے جائیں۔انہوں نے کہا کہ ضلع بھر کے تمام کسانوں کو نہری پانی کی منصفانہ فراہمی ہم سب کی مشترکہ ذمہ داری ہے۔آبیاشی کے افسران نے بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ سالانہ چلنے والی نہروں میں پانی کی دستیابی گذشتہ روز سے تقریباً مکمل ہے جبکہ ششماہی نہروں میں پانی کی شدید قلت ہے کیونکہ ششماہی نہروں میں ہیڈ پنجند سے پانی کی فراہمی بند ہے۔ڈپٹی کمشنر نے آبپاشی کے حکام کو ہدایت کی کہ جن نہروں میں پانی موجو دہے وہاں ٹیل تک کے کسانوں کو پانی کی فراہمی ہر صورت یقینی بنائی جائے جبکہ چولستان کو پانی فراہم کرنے والی نہریں بھی مسلسل چلتی

اپنا تبصرہ بھیجیں