ڈپٹی ڈاٸریکٹر آپریشن فوڈ اتھارٹی میانوالی رضا الرحمن کی شہریوں کو حرام اور مردہ مرغیاں سپلاٸی کرنے والے ناسوروں کے خلاف کارواٸی

میانوالی(بیورو رپورٹ) ڈپٹی ڈاٸریکٹر آپریشن فوڈ اتھارٹی میانوالی رضا الرحمن کی شہریوں کو حرام اور مردہ مرغیاں سپلاٸی کرنے والے ناسوروں کے خلاف کارواٸی۔جھامبرہ شرقی میانوالی میں مردہ مرغیاں سپلاٸی کرنے کے لیٸے بھکر لیجاتے ہوٸے ٹرک کو قبضہ میں لیکر ٹرک ڈراٸیور کو گرفتار کر کے ٹرک سمیت تھانہ میں بند کر دیا مقدمہ درج۔گزشتہ رات ڈپٹی ڈاٸریکٹر آپریشن فوڈ اتھارٹی میانوالی کو اپنے ذراٸع سے اطلاع ملی کہ کچھ لوگ کچرے کے ٹرک میں مردہ مرغیاں سپلاٸی کرنے کے لیٸے لے جا رہے ہیں جس پر انہوں نے فوڈ سیفٹی آفیسرحافظ محمد علی خالد اوراسسٹنٹ فوڈ سیفٹی آفیسر عبدالماجد بھٹہ کی سربراہی میں خصوصی ٹیم تشکیل دیکر کارواٸی کی ہدایت کی جنہوں نے رات تین بجے کے قریب ٹرک نمبر MNS_19_4433کو جھامبرہ شرقی کی قریب روک کرقابو کر لیا جس کو ڈراٸیورنزیراحمدولد کالو چلا رہا تھاٹرک کی تلاشی لینے پراس کے اندرکچرے کے نیچے گٹووں میں چھپاٸی گٸی 800 کلو گرام مردہ مرغیاں برآمد کر لیں ٹرک ڈراٸیور سے پوچھ گچھ کی تو اس نےبتایا کہ وہ یہ مردہمرغیاں سراۓ مہاجر ضلع بھکرسپلاٸی کرنے جا رہاتھا۔ڈپٹی ڈاٸریکٹر فوڈ اتھارٹی میانوالی رضا الرحمن نے مردہ اور حرام مرغیاں اپنی نگرانی میں تلف کراکے قبضہ میں لیا گیا ٹرک اور ڈراٸیور تھانہ صدر پولیس میانوالی میں بند کروا کےانکے خلاف پنجاب فوڈ اتھارٹی ایکٹ2011 کےتجت مقدمہ درج کر دیا۔ڈپٹی ڈاٸریکٹر آپریشن فوڈ اتھارٹی میانوالی رضا الرحمن نے کاروای کے متعلق میڈیا کو بتایا کہ ڈی جی پنجاب فوڈ اتھارٹی محمد شعیب خان جدون کی خصوصی ہدایات پر تمام بیکریوں سویٹ شاپس برف کے کارخانوں مشروبات دودھ اورفوڈ آٸٹمم کی سختی سے مانیٹرنگ اور چیکنگ کےساتھ ساتھ بیمار اور لاغر جانوروں کا مضر صحت یا مردہ گوشت فروخت کرنے والے معاشرہ کے ناسوروں کے خلاف بھی بھر پور کاروایاں کی جا رہی ہیں۔مضر صحت اور انسانی جانوں کے لیٸے نقصان دہ ہر فوڈ آیٹم کو چیک کیا جا رہا ہے اور حفظان صحت کے قوانین کی خلاف ورزی کے مرتکب افراد کارخانوں کے مالکان بیکری اور ہوٹل مالکان سمیت دودھ فروشوں کے خلاف بلا تفریق کاروایاں جاری ہیں۔کسی کو بھی انسانی جانوں سے کھیلنے کی اجازت نہیں دینگے اور جس نے بھی قوانین کی خلاف ورزی کی اسکے خلاف سخت ایکشن لیا جاۓ گا ناقص اور مضر صحت فوڈ آیٹم فروخت کرنے والوں کے خلاف بھاری جرمانوں کے علاوہ مقدمات بھی درج کریں گے۔

کیٹاگری میں : صحت

اپنا تبصرہ بھیجیں